آپ جہاں جا رہے ہیں اُس سفر میں اپنی حیثیت کو قبول کرنا

آپ جہاں جا رہے ہیں اُس سفر میں اپنی حیثیت کو قبول کرنا

خوف نہ کرکیونکہ تو پھر پشیمان نہ ہوگی تو نہ گھبرا کیونکہ تو پھر رسوا نہ ہوگی اور اپنی جوانی کا ننگ بھول جائے گا اور اپنی بیوگی کی عار(سنگینی) کو پھر یاد نہ کرے گییسعیاہ 54 : 4

یہ بہت ضروری ہے کہ ہم خود کو قبول کریں اور گلے لگائیں۔ آپ خود سے یہ سوال کریں کہ کیا آپ خود کو پسند کرتے ہیں؟ اگر آپ خود کو پسند نہیں کرتے تو کسی اور کو بھی پسند کرنے میں آپ کو دشواری کا سامنا  کرنا پڑے گا۔ اگرآپ خود سے ناخوش ہیں تو دوسروں کے ساتھ تعلق میں بھی آپ کو مشکل کا سامنا ہو گا۔

جب ہم خُداوند کے ساتھ قریبی تعلق میں ہوتے ہیں تو ہم پُرسکون اور مطمئین رہتے ہیں کیونکہ ہم  یہ جانتے ہیں کہ ہماری قبولیت کی بنیاد ہماری کارکردگی یا کامل رویے پر نہیں بلکہ اُس کام پر ہے جو خُداوند یسوع نے ہمارے لئے اور ہمارے اندر کیا ہے۔ اس کا انحصار خُداوند یسوع مسیح کے ساتھ ہمارے شخصی تعلق پر ہے۔

خود کو پسند کرنے کا سادہ سا مطلب یہ ہے کہ ہم خود کو یہ سمجھ کر قبول کریں کہ ہم خُدا کی تخلیق ہیں۔ خود کو پسند کرنے اور قبول کرنے کے لئے یہ ضروری نہیں کہ ہم ہر اُس کام کو بھی پسند کریں جو ہم کرتے ہیں۔ خُدا ہم سے غیر مشروط مُحبّت کرتا ہے اور یہاں تک کہ جب ہم سے کوئی غلطی سرزد ہوجاتی ہے تو بھی ہم اس کی فرزند ہی رہتے ہیں۔

میں آپ کی حوصلہ افزائی کرنا چاہتی ہوں کہ آپ خود کو ہر روز آئینہ میں دیکھیں اور کہیں کہ”میں خود کو پسند کرتی ہوں۔میں خُدا کا فرزند ہوں اور وہ مجھ سے پیار کرتا ہے۔ میرے پاس نعمتیں اور توڑے ہیں۔ میں خاص ہوں ۔۔۔۔ اور میں خود کو پسند کرتا/کرتی اور قبول کرتا/کرتی ہوں۔” اگر آپ ایسا کرتے ہیں اور واقعی میں اس پر یقین بھی کرتے ہیں تو اس کے وسیلہ سے آپ کے لئے اپنی شخصیت کو قبول کرنے میں حیرت انگیز طور پر مدد ہوگی۔

آپ اپنے ماضی کے بارے میں مطمین رہیں،اپنے حال سے راضی ہوں اور اپنے مستقبل کے بارے میں یقین کریں یہ جانتے ہوئے کہ یہ سب کچھ خُدا کے مُحبّت بھرے ہاتھ میں ہے۔

Facebook icon Twitter icon Instagram icon Pinterest icon Google+ icon YouTube icon LinkedIn icon Contact icon